قد افلح المومنون Oالذین ھم فی صلاتھم خاشعون Oوالذین ھم عن اللغو معرضون O

بلاشبہ کامیاب ہو گئے وہ مومن ۔جو اپنی نمازوں میں ڈرتے رہتے ہیں ۔اور جو بیکار کاموں سے اعراض کرتے ہیں۔

قال النبیﷺ من حسن اسلام المرء ترکہ مالایعنیہ

حضوراکرمﷺ نے ارشاد فرمایا آدمی کے اسلام کی خوبی یہ ہے کہ جس کام سے اس کا کوئی مطلب نہ اس کو چھوڑ دے۔

اللہ تعالی نے انسان کو ہر چیز امانت کے طور پر دی ہے اور اس کی حفاظت کرنا اور اس کو صحیح مصرف میں خرچ کرنا انسان کی ذمہ داری ہے ۔

اسی وجہ سے اللہ تعالی نے قرآن مجید میں خصوصی طور پہ حکم دیا ہے

ولا تبذر تبذیرا O ان المبذرین کانو اخوان الشیٰطین O وکان الشیطٰن لربہ کفوراO 

اور فضول خرچی نہ کرو ۔ بے شک فضول خرچی کرنے والے شیطانوں کے بھائی ہیں ۔ اور شیطان اپنے رب کا ناشکرا ہے۔

اپنے مال کی حفاظت کرنا بھی ضروری ہے اور اپنی جان کی بھی

اسی وجہ سے اپنےجسم کو تکلیف دینا بھی جائز نہیں ہے۔ کسی کی فوتگی پہ اپنے آپ کو مارنا ، ماتم کرنا جائز نہیں ہے۔

عن عبد اللّٰہ بن مسعود رضی اللہ عنہ قال قال رسول اللّٰہﷺ لیس منا من ضرب الخدود وشق الجیوب ودعا بدعوی الجاہلیۃ۔(بخاری: 1297، مسلم : 103)

حضرت عبد اللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ حضورﷺ نے ارشاد فرمایا جو اپنے گالوں پر مارے اور اپنے کپڑے پھاڑے اور جاہلیت کے زمانے کی طرح بین کرے وہ ہم میں سے نہیں ہے۔ (بخاری، مسلم)

اسی طرح اللہ تعالی کی دی ہوئی قیمتی نعمتوں میں سے ایک بہت بڑی نعمت وقت کی ہے اسی وقت کی نعمت کے بارے میں حدیث میں آتا ہے

لیس یتحسر اہل الجنہ الا علی ساعہ مرت بھم لم یذکرو اللہ تعالی فیہ

جنت میں جانے کے بعد آدمی کو کسی چیز کا کوئی افسوس ، حسرت نہیں ہو گی صرف اس وقت پر ہو گی جو اللہ تعالی کے ذکر کے بغیر گزرا ہو۔

لہذا اپنے وقت کی حفاظت کرنا اوراس کو زیادہ سے زیادہ قیمتی بنانے کی کوشش کرنا ہر ایک مسلمان کے لئے ضروری ہے اسی چیز کو اللہ تعالی نے قرآن مجید میں کامیاب مومن کی نشانی فرمایا اور حضور ﷺ اس کو اسلام کی خوبصورتی فرمایا ہے۔

اور وقت کو قیمتی بنانے کا طریقہ یہ ہے کہ اپنے ہر کام کا ایک شیڈول بنایا جائے اور اس شیڈول کے مطابق اپنے کاموں کو سرانجام دیا جائے۔

Please follow and like us:
0